شرمناک کام کی اجازت

Submitted on Wed, 03/15/2017 - 07:02

کینیڈا میں شہریوں کو ایک ایسے شرمناک کام کی اجازت دے دی گئی ہے جس پر انسانیت بھی شرم سے پانی پانی ہے۔ ذرائع مطابق کینیڈین سپریم کورٹ میں ایک شخص کے خلاف اپنے پالتو کتے کو اورل سیکس پر مجبور کرنے کے الزام کے تحت مقدمہ چل رہا تھا۔ اس مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ نے جانوروں کے ساتھ اورل سیکس کو قانونی قرار دے دیا ہے۔ اس شخص پر اپنی سوتیلی بیٹی پر جنسی حملہ کرنے کا بھی الزام تھا جس میں اسے سزا سنا دی گئی ہے۔ فیصلے میں سپریم کورٹ کی جج جسٹس روزیلی ابیلا کا کہنا تھا کہ جانوروں کے ساتھ سیکس اس وقت تک جرم قرار نہیں پاتا جب تک جنسی اختلاط نہ ہو۔ اگر کوئی شخص جانور کو صرف منہ سے سیکس پر مجبور کرتا ہے تو اس پر مقدمہ قائم نہیں کیا جا سکتا۔ عدالت کے اس فیصلے پر جانوروں کے حقوق کی تنظیمیں سراپا احتجاج ہیں۔ اینیمل جسٹس سمیت دیگر گروپوں کا کہنا ہے کہ ایسے فرسودہ قوانین کینیڈا کے جانوروں کا تحفظ کرنے میں ناکام ہو چکے ہیں۔ اینیمل جسٹس گروپ کی ڈائریکٹر کیمیلی لیبکوک کا کہنا تھا کہ آج کینیڈا کے قانون نے جانوروں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والوں کو اس کا لائسنس دے دیا ہے۔ یہ فیصلہ قطعی ناقابل قبول اور سماجی اقدار کے برعکس ہے۔ اس قانون پر عملدرآمد کسی صورت جاری نہیں رہنے دیا جائے گا۔